بھارت نے آزادکشمیر کیخلاف غیر اعلانیہ جنگ شروع کر دی،صدر مسعود

لندن (سیاست نیوز)آزاد جموں و کشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے وادی نیلم سمیت آزاد کشمیر کے مختلف سیکٹروں میں بھارتی فوج کی شہری آبادی پر وحشیانہ گولہ باری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے دشمن کی بزدلانہ حرکت قرار دیا ہے۔ لندن سے جاری ہونے والے ایک بیان میں صدر آزاد کشمیر نے وادی نیلم میں فلاکان، جورا بانڈی، اشکوٹ، صندوق، میرپورہ، کنڈل شاہی، لیسوا، نوسیری، نوسدہ کے علاوہ وادی لیپہ اور کھوئی رٹہ سیکٹر میں بھارتی فوج کی بلا اشتعال فائرنگ اور اس کے نتیجہ میں متعدد شہریوں کی شہادت اور زخمی ہونے پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے شہید و زخمی ہونے والوں کے خاندانوں سے گہری ہمدردی کا اظہار کیا اور بھارت کے اس وحشیانہ اقدام کو غیر اعلانیہ جنگ قرار دیا۔ اُنہوں نے کہا کہ ہم ایک عرصہ سے تسلسل کے ساتھ یہ بات کہہ رہے ہیں کہ بھارت مقبوضہ جموں و کشمیر کو اپنی کالونی قرار دینے کے بعد اپنا ہدف آزاد کشمیر پر حملہ کو قرار د ے چکا ہے۔ ہفتہ اور اتوار کی رات بھارت کی طرف سے دور مار آرٹلری گنوں سے حملہ ایک کھلی جارحیت ہے جس کا موثر جواب دینے کے علاوہ اقوام متحدہ سمیت عالمی برادری کو سخت نوٹس لینا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ بھارت کے ان بزدلانہ اقدامات کا واحد مقصد مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارتی جرائم سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے علاوہ آزاد کشمیر کے عوام اور پاکستان کو مقبوضہ جموں و کشمیر کے عوام کی جدوجہد آزادی کی حمایت سے روکنا ہے جس میں بھارت کبھی کامیاب نہیں ہو گا۔ اُنہوں نے کہا کہ بھارت جان بوجھ کر لائن آف کنٹرول پر جنگ کی صورتحال پیدا کر کے کشیدگی بڑھا رہا ہے جو کسی بھی وقت پاکستان اور بھارت کے درمیان بڑی جنگ کا سبب بن سکتا ہے۔ صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ اگر بھارت نے آزاد کشمیر کی شہری آبادی پر گولہ باری کا سلسلہ جاری رکھا یا جنگ مسلط کرنے کی کوشش کی تو آزاد علاقہ کے عوام کے لیے بھارت کے خلاف ہتھیار اُٹھا کر لڑنے کے سوا کوئی اور راستہ نہیں ہو گا

متعلقہ خبریں