حویلی قتل کیس،ورثا کا نظر ثانی اپیل کے بعد احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان

مظفرآباد(سیاست نیوز)ضلع حویلی سے تعلق رکھنے و الے نعیم راٹھور اور محبوب راٹھور سفاکانہ قتل کیس میں انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیئے گئے جب ریاست مقتولین کے لوائقین کو انصاف فراہم نہیں کرے گی تو لوگ اپنے فیصلے خود کرنے لگ جائیں گے ہمیں بتایا جائے ہم نعیم راٹھور اور محبوب راٹھور کا سفاکانہ قتل کے خون کس کے ہاتھ پر تلاش کریں اعتراف جرم اور آلہ قتل کی برآمدگی کے ماجود ریاست کی سب سے بڑی عدالت سے سنگین قتل کے ملزم کی بریت انصاف کا کھلا قتل ہے عدلیہ کا حترام عدل و انصاف سے مشروط ہے جبکہ سیشن کورٹ اور ہائی کورٹ نے ملز م کے مجرم قرار دیا اور سزاہیں سنائیں سپریم کورٹ میں نظرثانی اپیل دائیر کر رہے ہیں اگر نظر ثانی اپیل میں انصاف نہ ملا تو پھر بھرپور احتجاجی تحریک چلایں گے اور لوائقین کو حق ہو گا وہ خود انصاف لینے کا فیصلہ کریں گے،مرکزی ایوان صحافت میں پاکستان تھریک انصاف آزاد کشمیر کے رہنماہ شہاب الطاف راٹھور طاہر راٹھور راجہ امجد راجہ عمران راٹھور نے لوائقین کے ہمرا پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نعیم راٹھور اور محبوب راٹھور جو کہ حقیقی بھائی ہیں انکو اپریل 2013میں انتہائی بے دردی سے قتل کیا گیا مقتولین کی بوری بند لاشیں برآمد ہوئیں پولیس نے دن رات محنت کر کے اندے قتل برآمد کئیموجودہ ایس پی یاسین بیگ نے ملزمان کو ٹریس کیا اور ملزمان سے آلہ قتل بھی برآمد کیا پولیس کی جانبدار تحقیقات کے بعد چلان پیش ہوا گیارہ میں سے تین مرکزی ملزمان کو واردات قتل کے عتراف پر پہلے سیشن کورٹ پھر ہائی کورٹ سے سزائیں ہوئی دوسرے قتل کیس کے تمام شواید ثبوت اور گواہان موجود ہیں لیکن سپریم کورٹ نے شواید ثبوت گواہان اور آلہ قتل برآمدہونے کے باجود مجرمان کو شک کا فائیدہ دیکر کر بری کر دیا اور جانفشانی سے اندے قتل برآمد کرنے والی پولیس ٹیم کو بھی زیر تاب لایا گیا اندھے قتل کے ملزمان کی بریت پر حویلی میں عوام سخت مشتعل ہیں

متعلقہ خبریں