لوڈشیڈنگ نے ریکارڈ توڑ دیے،کم وولٹیج کے باعث قیمتی برقی مصنوعات خاکستر

مظفرآباد(سیاست نیوز)دارلحکومت مظفرآباد سمیت محکمہ برقیات کی غفلت اور ناقص حکمت عملی کے باعث لوڈشیڈنگ میں طویل اضافہ ہوگیا،عوام کی جانب سے شدید احتجاج اور سڑکیں بندکرنے کے باوجود محکمہ برقیات کے کان تالے جوں نہ رینگی نہ ہی حکومت آزادکشمیر کی جانب سے کوئی نوٹس لیا گیا،برقیات نے چہلہ بانڈی میں بجلی کی طویل ترین لوڈشیڈنگ کرکے ریکارڈز توڑ دیے جبکہ محکمہ برقیات کے دفاتروں کے ٹیلیفون بند،ملازمین نے بھی موبائل بند کرکے صارفین کو شدید مشکلات سے دوچار کردیا ہے،صارفین نے حکومت آزادکشمیر،وزیر برقیات سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کریں بصورت دیگر محکمہ برقیات کے تمام دفاتروں کے باہر شدید احتجاج کا اعلان کریں گے۔تفصیلات کے مطابق دارلحکومت مظفرآباد میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے تمام ریکارڈز توڑ دیے گئے،گزشتہ ایک ماہ سے بجلی کی طویل ترین لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے جبکہ بجلی کی باربار آنکھ مچولی کے باعث صارفین کا الیکٹرانک کا سامان جل کر خاکستر ہوگیا مگر محکمہ برقیات کو شکایات کے باوجود نہ تو لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بند ہوا بلکہ اس میں مزید اضافہ کردیا جبکہ معلوم ہوا ہے کہ محکمہ برقیات کے آفیسران جان بوجھ کر صارفین کو تنگ کرنے کیلئے واپڈا سے مختلف تاروں کی مرمت کے بہانے پرمٹ لے کر تنگ کیا جارہا ہے اور اپنے دفاتروں میں بیٹھ کر گپ شپ میں مصروف رہتے ہیں جب من میں آئے تو بجلی آن کردیتے ہیں جو کہ سراسر غلط ہے،عوام کا کہنا ہے کہ اگر لوڈشیڈنگ کا خاتمہ نہیں کیا گیا تو عوام شدید احتجاج کرے گی جس کا ذمہ دار محکمہ برقیات ہوگا۔

متعلقہ خبریں