ہائی کورٹ میں ججز کی عدم تعیناتی، وکلا کا ریاست گیر احتجاج

مظفرآباد/میرپور(سیاست نیوز)آزاد جموں وکشمیر عدالت العالیہ میں ججز کی عدم تعیناتی اور مسلسل لیت ولعل سے کام لینے پر صدر آزاد کشمیر ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن بابر علی خان ایڈووکیٹ کی کال پر آزاد کشمیر بھر میں تمام ضلعی و تحصیل بار ایسوسی ایشن نے مکمل طور پر عدالتی بائیکاٹ کیا۔ وکلائاحتجاجاً کسی بھی عدالت میں پیش نہ ہوئے۔ مختلف بار رومز میں اس حوالے سے احتجاجی پروگرام منعقد کیے گئے۔ آزاد کشمیر ہائیکورٹ بار کے بار روم ہا میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صدر آزاد کشمیر ہائی کورٹ بار بابر علی خان ایڈووکیٹ نے کہا کہ عدالت العالیہ آزاد کشمیر میں ایک سال سے زائد عرصہ سے عدلیہ بحران جاری ہے۔ چیف جسٹس سمیت کل نوججز کی آسامیاں ہیں اس وقت ہزاروں کیسز زیر سماعت ہیں مگر بدقسمتی سے اس وقت صرف چیف تعینات ہیں آٹھ ججز کو تعینات نہیں کیا جارہا ہے جبکہ ا س بارے عدالت العالیہ نے مارچ 2021میں چیف جسٹس صاحبان کی تعیناتی کے تیس دن کے اندر عدالت العالیہ ججز تعینات کرنے کیلئے وقت بھی دیا تھا۔ جس کو متعلقہ اداروں نے تسلیم نہ کیا اور توہین عدالت بھی کی جارہی ہے آٹھ ججز نہ ہونے سے سائلین خوار ہو رہے ہیں آج آزاد کشمیر بھر میں عدالتی بائیکاٹ کیا ہے اگر ایک ہفتے کے اندر معاملہ حل نہ کیا گیا تو ریاست بھر کی بار ایسوسی ایشن کے ساتھ مل کر آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔ہم اس معاملے میں آخری حدتک جائیں گے چیئرمین کشمیر کونسل حکومت آزاد اس معاملے کو سنجیدہ لے وگرنہ شدید احتجاج کیا جائے گا۔ آزاد کشمیر ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن ریاست بھر کی تمام ضلعی اور تحصیل بار ایسوسی ایشن کا شکریہ ادا کرتی ہے کہ انہوں نے مختصر کال پر ہڑتال اور عدالتی بائیکاٹ کیا ہے

متعلقہ خبریں