میرپور،میٹ دی سٹیزن کے تحت کھلی کچہری، عوام نے شکایات کے انبار لگادیے

میرپور (سیاست نیوز)آزادکشمیرکے سیکرٹری برقیات وآبی وسائل چوہدری محمدطیب نے کہاہے کہ وزیراعظم آزادکشمیرسردارعبدالقیوم نیازی اور چیف سیکرٹری شکیل قادرخان کی ہدایت پرآزادکشمیربھرمیں ”میٹ دی سٹیزن“ کے تحت کھلی کچہریاں لگائی جارہی ہیں تاکہ حکومت کے سینئرافسران خود موقع پرجاکرلوگوں کی شکایات سنیں اور مسائل کاجائزہ لیں اور جومسائل ضلعی اور ڈویژنل سطح پرحل ہونے والے ہوں وہ وہاں حل کیے جائیں اور جومعاملات حکومت کے متعلق ہیں انھیں حکومتی سطح پرحل کیاجائے جس سے زیادہ سے زیادہ عوام الناس کے مسائل حل ہوں گے اور انھیں ان کی دہلیز پرعوامی مفاد اور انصاف مل سکے۔ میرپورآزادکشمیر کابڑاصنعتی ضلع،اوورسیز اورمتاثرین منگلاڈیم کاشہرہے۔ اس ضلع کے عوام نے پاکستان کی ترقی،توانائی، آبی وسائل اور زرعی خوشحالی کے لیے منگلاڈیم کی صورت میں جوقربانیاں دی ہیں اس سے اس ضلع کی اہمیت وافادیت میں اضافہ ہواہے۔ متاثرین منگلاڈیم کے لیے بنائے جانے والے نیوسٹی اور سمال ٹاؤنز میں واپڈا کے متعلق بقیہ ترقیاتی کاموں، رٹھوعہ ہریام برج، گریٹرواٹرسپلائی سکیم، متاثرین منگلاڈیم کے ذیلی کنبہ جات کامعاملہ،سوئی گیس، متاثرین زلزلہ کے نقصانات کے لیے معاوضہ جات سمیت انتظامیہ،پولیس،ادارہ ترقیات، میونسپل کارپوریشن، ایم ڈی ایچ اے،ضلع کونسل، بجلی، پانی،صحت،محکمہ تعلیم سکولز،کالجز،ایلیمنٹری،سماجی بہبود، لوکل گورنمنٹ، ریسکیو1122،شہری دفاع، امورحیوانات،زراعت،اطلاعات،صنعت وتجارت، جنگلات اور دیگرمحکمہ جات کے خلاف ہونے والی شکایات کاازالہ ہوگا۔کھلی کچہری میں عوام الناس نے زمینوں کے متعلق،ٹریفک پولیس، میونسپل کارپوریشن،ادارہ ترقیات کے پلاٹوں پرناجائز قابضین، واٹرسپلائی، بجلی کے میٹروں اور اوسط بلات، سیوریج سسٹم کی بحالی، شہرمیں صفائی وستھرائی ودیگرمحکموں کے خلاف پھٹ پڑے اور اپنی اپنی زبانی اور تحریری شکایات ہیں جبکہ متعددافراد نے مختلف تجاویز بھی پیش کیں۔ سیکرٹری برقیات وآبی وسائل چوہدری محمدطیب نے جملہ شکایات کنندگان کی شکایات غور سے سنی اور بعض شکایات کنندگان کے مسائل موقع پرحل کرنے کے لیے متعلقہ اداروں کے ڈویژنل وضلعی سربراہان محکمہ جات کوہدایات دیں کہ وہ فوری طورپران مسائل کوحل کریں اور اس کی رپورٹ پیش کی جائے۔ ان خیالات کااظہار انھوں نے حکومت آزادکشمیراور چیف سیکرٹری آزادکشمیرکی ہدایت پرضلعی انتظامیہ کے زیراہتمام پی ڈبلیوڈی ریسٹ ہاؤس میں کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ کھلی کچہری میں کمشنر میرپورڈویژن چوہدری محمدرقیب خان، ڈائریکٹرجنرل ایم ڈی ایچ اے چوہدری محمدمنشاء نقشبندی، چیف انجینئربرقیات نواز عباسی، ڈائریکٹراسٹیٹ مینجمنٹ ایم ڈی اے چوہدری امجداقبال، ڈویژنل ڈائریکٹرلوکل گورنمنٹ راجہ محمدفیاض، ڈی ایچ او ڈاکٹرفداحسین راجہ، ایم ایس ڈاکٹرفاروق احمدنور،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرجنرل چوہدری ساجد حسین کے علاوہ جملہ محکموں کے افسران بھی موجود تھے۔ کھلی کچہری سے آزادکشمیرکے سیکرٹری برقیات چوہدری محمدطیب،ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر عمراعظم، ایس ایس پی کامران علی، اسسٹنٹ کمشنرمنیراحمد قریشی، پی ٹی آئی کے ضلعی صدروسابق چیئرمین ایم ڈی اے چوہدری محمدصدیق، ممتاز دانشورکے ڈی چوہدری، چوہدری شکیل رضا ایڈووکیٹ، انصاف ٹریڈونگ کے راجہ خالد محمود خان، مسلم کانفرنس کے عبدالشکورمغل، ایکسین پی ایچ ای چوہدری ارشدحسین، ڈی ایف سی چوہدری محمدضمیر نے خطاب کیاجبکہ تاج الدین ایڈووکیٹ،عاشق سلہریا، ظہیرغفور، ممتاز علی خاکسار، شیخ عثمان، فیصل گلزار،راجہ شفاقت، اوورسیز چوہدری محمدیونس، حبیب الرحمان، محمدظفر، ذیشان الحق، اصغر چوہان، احتشام الحق، محمود ہاشم، محمدفاروق، محمدصدیق، چوہدری سلیمان، محمدشفیق، محمدریاست، احمدمرتضیٰ، انصرعلی، فریدہ عارف، محمدصادق، سید ضیاء قمرسمیت دیگر افراد نے اپنی اپنی شکایات پیش کیں۔ پی ٹی آئی کے ضلعی صدر چوہدری محمدصدیق نے وزیراعظم سردارعبدالقیوم نیازی اور چیف سیکرٹری آزادکشمیر شکیل قادرخان کی ہدایات پرلائن آف کنٹرول سمیت آزادکشمیربھرکے اضلاع میں کھلی کچہریاں منعقد کرکے عوامی مسائل سے آگاہ ہونے کوسراہتے ہوئے کہاکہ میرپورمسائلستان بناہواہے محکمہ برقیات کے متعددفیڈرنامکمل ہیں بجلی کے پولوں کوسڑکات سے ہٹانے کاکام التواء کاشکارہے۔ سڑکات سے تجاوزات ہٹائی جائیں، فٹ پاتھ خالی کروائے جائیں، تجاوزات ہٹانے سے عوام الناس کوفائدہ ہوناچاہیے ناں کہ لوگوں کو نقصان پہنچانامقصود ہو۔ انھوں نے کہاکہ بجلی کے ٹرانسفارمرکی چوری اور مرمت کے معاملات یکسوکیے جائیں۔ سرکاری افسران کوقانون وقاعدے کے مطابق ایک مدت کے لیے ہی ایک جگہ رکھاجائے۔ جن افسران کی کارکردگی ٹھیک نہیں ہے ان کامحاسبہ کیاجائے۔ میرپورکوسونے کی چڑیانہ سمجھاجائے،یہ شہرطویل ترین قربانیوں کے بعد معرض وجود میں آیاہے۔ محکمہ برقیات اور محکمہ لینڈ ریونیو ٹیکسز کے ٹارگیٹ حاصل کرنے کے لیے میرپورسے آغاز کرتے ہیں۔ کرپشن اور بدعنوان عناصر کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے اور ان کااحتساب کیاجائے۔ سرکاری اداروں میں کسی بھی ملازم کی حق تلفی کرکے دوسروں کوپرموٹ نہ کیاجائے۔ میرپورریونیو دینے کے لحاظ سے سب سے آگے ہے تاہم یہاں کے مسائل کی طرف توجہ نہیں دی گئی۔ الیکشن شیڈول کے دوران کی گئی تعیناتیوں کی انکوائری کروائی جائے۔ سکولوں کالجوں سمیت دیگرتمام اداروں اورمحکموں میں خالی آسامیوں پرپبلک سروس کمیشن کے تحت مستقل بنیادوں پرتقرریاں عمل میں لائی جائیں تاکہ ایڈھاک ازم کامکمل خاتمہ ہوسکے، پولیس فاؤنڈیشن کی آمدن میرپورکی پولیس اورتھانوں کی عمارتوں کی بہتری پرخرچ کی جائے۔ ٹریفک سسٹم کوبہترکیاجائے۔ ڈرائیونگ لائسنس سمیت ٹریفک پولیس کی ٹریفک کورواں دواں رکھنے کے لیے تربیت دی جائے۔ سڑکات کی تعمیرکے بعد اکھاڑ بچھاڑنہ ہونے دی جائے۔ رجسٹری کیس میں شامل افراد کوکیفرکردارتک پہنچاجائے۔ اوورسیز اور لوگوں کے پلاٹوں پرناجائز قبضہ مافیا کے خلاف ایکشن لیاجائے۔ میرپورمیں سوئی گیس،رٹھوعہ ہریام پل کی تعمیر، گریٹرواٹر سپلائی، سیوریج سکیم،PMU سمیت دیگرادھورے کاموں کوپایاتکمیل تک پہنچانے کے لیے اقدامات اٹھائے جائیں تاکہ حکومت کی کارکردگی زمین پرنظرآئے۔ اس موقع پرکے ڈی چوہدری نے شہداء لندن کی قربانیوں کاذکرکرتے ہوئے کہاکہ شہید محمدحنیف کے مقبرہ کی طرف جانے والی سڑک پرناجائز قبضہ کیاگیاہے جوابھی تک واگزارنہیں ہوسکا۔ ناجائز قابضین اور قبضہ کروانے والے افسران کے خلاف بھی کارروائی ہونی چاہیے۔ ٹریفک پولیس بلاوجہ شہریوں اور بالخصوص ڈڈیال کی پبلک ٹرانسپورٹ کوتنگ نہ کرے۔کھلی کچہری میں اوورسیز کے نمائندگان چوہدری محمدیونس نے کہاکہ اس نے ادارہ ترقیات میرپورسے دوعددقیمتی پلاٹ خرید کیے تھے جبکہ اس پرایک اعلیٰ افسرنے ناجائز قبضہ کررکھاہے۔ اوور سیز کس طرح یہاں سرمایہ کاری کریں گے جب ان کی املاک کوتحفظ دینے والے خود قابض ہوجائیں گے۔کھلی کچہری میں شکایات کنندگان نے بجلی کی غلط ریڈنگ،اوسط بلات اورمحکمہ برقیات کے ملازمین کومفت بجلی کی سہولیات فراہم کیے جانے، شہری سہولیات کی عدم فراہمی کے متعلق مختلف شکایات کیں جبکہ ایک خاتون نے اپنے خاوند کی گذشتہ دوسالوں سے گمشدگی کے حوالے سے ایس ایس پی کوشکایت کی۔ صحا

متعلقہ خبریں