واجبات کی ادائیگی نہ کرنے والے محکموں کے اشتہارات کی اشاعت روکنے کافیصلہ

میرپور(سیاست نیوز)آزادحکومت ریاست جموں وکشمیرکی سیکرٹری اطلاعات وآئی ٹی محترمہ مدحت شہزاد نے کہاہے کہ وزیراعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر سردارعبدالقیوم نیازی اور چیف سیکرٹری شکیل قادرخان کی ہدایت پرآزادکشمیربھرمیں عوامی مسائل کے حل کے لیے 27 ستمبرسے مختلف ہفتہ جات منانے کاسلسلہ جاری ہے۔ ”میٹ دی سٹیزن“ کے تحت حکومت آزادکشمیرکے سینئرآفیسرزہرضلع میں کھلی کچہریاں لگارہے ہیں اور عوامی مسائل سن کراس کی رپورٹ حکومت کوپیش کررہے ہیں۔ شعبہ صحافت کی نظر پوری ریاست،حکومت اور عوام کے مسائل کی طرف ہوتی ہے، جس کے لیے میرپوراوربھمبرمیں صحافیوں سے پریس بریفنگ میں مسائل کی نشاندھی اور ان کے حل کے لیے تجاویز مرتب کی جائیں گی۔ آزادکشمیرمیں صحافیوں کے لیے جرنلسٹس کالونیاں بنائی جارہی ہیں۔ پریس فاؤنڈیشن کے پلیٹ فارم سے صحافیوں کی فلاح وبہبود کی جارہی ہے۔ اخبارات کے اشتہارات کے لیے بقایاجات کی ادائیگی اور اشتہارات کی تقسیم کانظام منصفانہ ہوگا۔ ڈمی شائع ہونے والے اخبارات کومیڈیالسٹ سے ختم کردیاگیاہے۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان کی طرف سے آزادکشمیر کو520 ارب کے پیکج کوآزادکشمیربھرمیں بڑے بڑے منصوبہ جات پرخرچ کرنے کے لیے منصوبہ سازی کی جارہی ہے۔ آزادکشمیرکے سالانہ ترقیاتی بجٹ 28 ارب کے ساتھ ساتھ ہرسال ایک سو ارب روپے وفاق کی طرف سے آزادکشمیرکوفراہم کیے جائیں گے جس سے آزادکشمیربھرمیں بڑے بڑے ترقیاتی پراجیکٹس مکمل ہوسکیں گے۔ ان خیالات کااظہار انھوں نے دورہ میرپورکے دوران پرنٹ والیکٹرانک میڈیا نمائندگان کے ساتھ منعقدہ پریس بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پرڈائریکٹرجنرل اطلاعات راجہ اظہراقبال خان، اسسٹنٹ کمشنرمنیراحمدقریشی، ڈسٹرکٹ انفارمیشن آفیسر محمدجاوید ملک، پرائیویٹ سیکرٹری گلبہار خان اورمیڈیانمائندگان کی بڑی تعداد موجود تھی۔ آزادکشمیرکی سیکرٹری اطلاعات وآئی ٹی محترمہ مدحت شہزاد نے پریس بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ موجودہ حکومت نے اقتدار سنبھالنے کے بعد شارٹ ٹرم،مڈٹرم اور لانگ ٹرم منصوبہ سازی کی ہے جب کے پہلے مرحلہ میں آزادکشمیربھرسے ہزاروں ٹن کچرااٹھایاگیااس طرح انسداد تجاوزات کے خاتمے کامرحلہ بھی شروع کیاگیا،صفائی وستھرائی کے ہفتہ کے دوران پہلے مرحلہ پرشہروں کی صفائی پھردیہی علاقوں اور سیاحتی مقامات کی صفائی وستھرائی کی گئی جس کو عوام الناس نے سراہاہے۔ صفائی وستھرائی کے لیے مستقل بنیادوں پرحکمت عملی بنائی جارہی ہے۔ ہفتہ انسداد تجاوزات کے دوران محکمہ مال، خالصہ سرکار،جنگلات اور دیگرمحکموں کی زمینوں سے ناجائز قبضہ واگزار کروائے گئے۔ آزادکشمیربھرمیں سینئرسیکرٹری حضرات نے لائن آف کنٹرول پرجاکرمتاثرین ایل او سی کے مسائل سے آگاہی حاصل کی اور موقع پرجاکرعوامی مسائل سنے اور ان کی دادرسی کی۔ سیکرٹری اطلاعات وآئی ٹی محترمہ مدحت شہزاد نے مزیدبتایاکہ اب آزادکشمیر بھرمیں تعمیروترقی کے کاموں کی مانیٹرنگ کویقینی بنایاجارہاہے۔ جوجونئی سڑکات تعمیرہورہی ہیں ان کے ساتھ دیگرسہولیات کے لیے پانی، سیوریج، ٹیلی فون لائنز سمیت دیگرعوامی سہولیات کی فراہمی کے لیے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔انھوں نے کہاکہ حکومت آزادکشمیرنے پہلی سہ ماہی میں 71 فیصد کے اخراجات مکمل کرلیے ہیں جبکہ حکومتی وسائل کوخرچ کرنے کے لیے قانون وقاعدے اور ضابطہ کاہرممکن خیال رکھاجارہاہے۔ اس طرح حکومتی ریفارمزکے لیے کابینہ کے اجلاس تسلسل سے ہورہے ہیں۔صحافیوں کے سوالات کاجواب دیتے ہوئے سیکرٹری حکومت نے کہاکہ آزادکشمیر کی تاریخ میں پہلی مرتبہ سیکرٹری حضرات عوام الناس کے پاس خود جاکرمسائل سن رہے ہیں اور کھلی کچہریوں میں عوام کودرپیش مسائل موقع پرحل کیے جانے کے لیے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں اور اس کی رپورٹ حکومت کو پیش کی جارہی ہے۔ بیشترلوگوں کی شکایات موقع پرحل بھی ہورہی ہیں یہ عوام کے لیے بڑاریلیف ہے۔ میرپورمیں ٹورازم اور آئی ٹی کے بڑے پراجیکٹ شروع کررہے ہیں۔ رٹھوعہ ہریام برج، میرپورگریٹرواٹرسپلائی وسیوریج سکیم کی تکمیل سمیت منگلاجھیل کوسیاحت کامرکز بنانے کے لیے حکومت اقدامات اٹھارہی ہے۔ منگلاقلعہ کوعوام الناس کے لیے کھولنے کامعاملہ بھی حکومتی سطح پرحل کیاجائے گا۔ صحافیوں نے محکمہ اطلاعات کی طرف سے اشتہارات کی تقسیم کار کومنصفانہ بنانے اور اشتہارات کے بقایاجات کی ادائیگی، کشمیرپریس کلب کے انتخابات،صحافیوں کے لیے تربیتی ورکشاپ اور ٹریننگ کروانے، پریس فاؤنڈیشن میں اصلاحات نافذ کرنے، ضلعی دفاتر محکمہ اطلاعات کی بلڈنگ کی تعمیر،ورکنگ جرنلسٹس کوپریس فاؤنڈیشن اور پریس کلب ہاکی رکنیت دلانے، متاثرین منگلاڈیم کے ایشو، ذیلی کنبہ جات، منگلاڈیم کی رائلٹی دینے،برقیات کے بلات، اوورسیز کشمیریوں کے ادارہ ترقیات کے پلاٹوں اور زمینوں پرناجائز قبضہ کی واگزاری سمیت دیگرمسائل بیان کیے اور ان کے حل کے لیے حکومتی سطح پرموثراقدامات اٹھانے پرزوردیا۔ سیکرٹری اطلاعات وآئی ٹی محترمہ مدحت شہزاد نے جملہ مسائل غور سے سنے اور ان کے حل کی یقین دھانی کروائی۔ انھوں نے کہاکہ اوورسیز ریاستی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان،وزیراعظم آزادکشمیرسردارعبدالقیوم نیازی اور چیف سیکرٹری شکیل قادرخان کی ہدایات پراوورسیز کے مسائل کے حل کوحکومت نے اپنی ترجیحات میں رکھاہواہے اس حوالے سے اوورسیز شکایات سیل بھی قائم ہیں جہاں کسی بھی محکمہ یاادارے کے خلاف اوورسیز اپنی شکایات درج کرواسکتے ہیں۔ ڈائریکٹرجنرل اطلاعات راجہ اظہراقبال خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ آزادکشمیربھرمیں صحافیوں کے لیے جرنلسٹس کالونیاں بنائی جارہی ہیں۔ اشتہارات کے بقایاجات کی ادائیگی کے لیے حکومتی سطح پرمعاملات اٹھائے جارہے ہیں۔ جن جن محکمہ جات کے ذمہ اخبارات کے بقایاجات ہیں اگروہ بروقت ادائیگی نہیں کریں گے تو ان کے اشتہارات کی اشاعت روک دی جائے گی۔ پریس فاؤنڈیشن کے بورڈ آف گورنرکے انتخابات کے بعد بورڈ آف گورنرکے اجلاس میں ہی فاؤنڈیشن کے قواعد وضوابط میں ترامیم ہوسکتی ہیں۔ آزادکشمیر محکمہ اطلاعات کی میڈیالسٹ میں 210 اخبارات وجرائد شامل تھے جن کی چھان بین کرکے اب صرف 72 رہ گئی ہے۔ اشتہارات کی تقسیم کے لیے پیپرارولز کوفالوکیاجارہاہے۔ ریاستی اخبارات کومضبوط بنانے کے لیے کوٹہ میں اضافہ کی تجویز حکومت کوپیش کریں گے۔ پریس فاؤنڈیشن کے 65 سالہ ممبرکوپنشن کی مد میں 20 ہزارماہوار ادائیگی کی جائے گی۔ آزادکشمیربھرکے صحافیوں کے لیے 2 ماہ ٹریننگ کروائی جارہی ہیں جس میں پہلے مرحلہ میں آزادکشمیربھرسے 16 صحافیوں کوشامل کیاجائے گا جبکہ اس طرح اگلے مرحلہ میں مزید16 صحافی حضرات پروفیشنل ٹریننگ اسلام آباد میں کرسکیں گے۔ آزادکشمیرمیں ایکریڈیٹیشن کارڈ ہولڈر کوریلوے میں نصف کرایہ کی سہولیات موجود ہے جبکہ اندر ن پاکستان ہوائی سفر کے لیے نصف کرایہ سمیت دیگرسہولیات کی فراہمی کے لیے بھی کوششیں جاری ہیں۔

متعلقہ خبریں