کومی کوٹ کا رہائشی قتل،مالسی نالہ میں بچہ ڈوب گیا،باغ کے نوجوان کی خود کشی

گڑھی دوپٹہ (سیاست نیوز) گڑھی دوپٹہ تھانہ کی حدود کومی کوٹ میں قتل کی واردات، پرانی رنجش پر تیس سالہ جوان کو قینچی کے وار کر کے قتل کر دیا گیا۔ علاقہ کی فضا سوگوار، ملزم گرفتار، تفصیلات کے مطابق راجہ عدالت ولد راجہ یعقوب خان ساکنہ کومی کوٹ اور راجہ ندیم ولد افراسیاب خان کے درمیان پرانی رنجش تھی گزشتہ رات افطاری کے بعد دونوں میں معمولی توں تکرار ہوئی جس پر راجہ ندیم ولد افراسیاب خان نے راجہ عدالت ولد یعقوب خان کو قینچی کے پے ر پے وار کر کے قتل کر دیا۔ تیس سالہ جوان کی اچانک موت پر علاقہ کی فضا سوگوار ہو گئی اور حالات بھی کشیدہ ہو گئے تا ہم گڑھی دوپٹہ پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے قتل کے ملزم راجہ ندیم ساکنہ کومی کوٹ کو گرفتار کر تے ہوئے مقدمہ درج کر کے مزید تفتیش شروع کر دی ہے۔ پولیس نے پوسٹ مارٹم کے بعد نعش ورثاء کے حوالے کر دی۔ مقتول راجہ عدالت کی نماز جنازہ کومی کوٹ میں ادا کی گئی جس میں مختلف مکاتب فکر کے سیکڑوں افراد نے شرکت کی،مالسی نالے میں نہاتے ہوئے 13 سالہ لڑکا ڈوب کر جاں بحق، تفصیلات کے مطابق اسامہ ولد محمد اشرف مغل عمر تقریباً تیرہ سال تھی گزشتہ روز مالسی نالے میں نہاتے ہوئے ڈوب کر جاں بحق ہو گیا۔ مرحوم اسامہ گھر سے سکول آیا ہوا تھا اور سکول سے نہانے کیلئے نالے پر چلا گیا اس دوران نہاتے ہوئے ڈوب کر جاں بحق ہو گیا جس کی نماز جنازہ گزشتہ روز آبائی گاؤں ٹھوٹھہ صرائی میں ادا کی گئی، غیرت کے نام پر 18سالہ نوجوان اویس مشکورنے گلے میں پھندا ڈال کر خود کشی کر لی تفصیلات کے مطابق باغ کے نواحی گاؤں میں نعمانپورہ میں گزشتہ دنوں گاؤں پوٹھہ نکرمیں کے رہائشی محمد سبیل،اور شبیر بیگ نے باغ پولیس کو درخواست دی کہ میری دکان سے سامان اور گاڑی سے بیٹری چوری کی گئی ہے اس پر پولیس نے مقصود بیگ،طاہر لعل،حیات عزیز نے علاقہ میں چھاپہ مارا اور دو نوجوانوں پر شک کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں شک ہے کہ ان دو نوجوانوں نے ہماری چوری کی ہے جن میں اویس مشکور،ولد محمد مشکو، اور دوسرا عادل خادم ولد محمد خادم تو پولیس علاقہ پوٹھہ میں گئی اور وہاں پر تفتیش کی تو جب ان لڑکے اویس مشکور کو معلوم ہوا کہ مجھے پر شک کیا جارہا ہے اور میرے خلاف باغ پولیس نے رپورٹ درج کی ہے تو اس نوجوان اویس مشکور غیر ت کے نام پر یہ الزام برداشت نہ کرتے ہوئے اپنے ماموں کے گھر کی چھت پر گلے میں پھندا ڈال کر اپنی زندگی کا خاتمہ کردیا دیا اس موقع پر جب نعش باغ ہسپتال لائی گئی تو اویس مشکور کے والد نے اپنے بیان میں کہا کہ میں غریب تو ضرور ہوں مگر بے غیرت یا چور نہیں ہوں میں نے اپنے بچوں کو رزق حلال کھلایا ہے بعض لوگوں نے میرے بچے پر جھوٹا الزام لگایا ہے

متعلقہ خبریں